ٹپ اور کرایہ! سو لفظوں کی کہانی ۔۔۔ عارف چنگیزی

فاطمہ: ویٹر!
ویٹر: جی میڈم!
فاطمہ: مینو دیجئے۔
ویٹر: لیجئے میڈم۔
فاطمہ: ہمارے لئے 3 اسپیشل برگر، 1 درمیانی پیزا ، 1 رشیئن سلاد اور 3شوگر فری سپرائٹ لائیں۔
ویٹر: ok میڈم!
فاطمہ: کتنا وقت لگے گا؟
ویٹر: بس 20منٹ۔
ویٹر: لیجئے آپ کا آرڈر۔
فاطمہ: تھینک یو۔
فاطمہ: ویٹر! بل لائیں کتنا ہوا؟
ویٹر: یہ لیجئے، 4000 روپے ہوگیا۔
فاطمہ: یہ لیں 5000روپے، 1000روپے آپ کی ٹپ۔
ویٹر: تھینک یو میڈم۔
آصفہ: ٹپ بہت زیادہ نہیں دی؟
فاطمہ: کوئی بات نہیں؛ چلیں۔
آصفہ: ٹھیک ہے چلیں۔
فاطمہ: رکشہ!
عابد: کہاں جانا ہے؟
فاطمہ: ناصرآباد۔
عابد: بیٹھ جائیں۔
فاطمہ: کرایہ کتنا لوگے؟
عابد: 200 روپے۔
فاطمہ: یہ تو بہت زیادہ ہے۔
عابد: پیٹرول مہنگا ہوگیا ہے۔
فاطمہ: 180روپے میں جانا ہے تو ٹھیک، ورنہ ہم دوسرا رکشہ لیں گے۔
عابد:   بیٹھ جائیں۔

عارف چنگیزی
0 Shares

عارف چنگیزی

قائد اعظم یونیورسٹی اسلام آباد سے فارغ التحصیل عارف چنگیزی گزشتہ کئی سالوں سے درس و تدریس سے وابستہ ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *