والعصر ۔۔۔ مصطفیٰ شاہد

والعصر

مصطفیٰ شاہد

پھولی ہوئی سانسوں کی ڈوریں

 جب اس کے پاؤں سے لپٹیں

تو وہ باسٹھویں زینے پر بیٹھ گیا 

“کاش میں واپس جاسکتا” اس نے سوچا: 

“پانی کا رخ موڑ کے واپس آجاتا

عمر کا بہتا پانی کیسے خاک ہوا

 تن کے خار و خس کی سیرابی میں پانی خاک ہوا

 اس سے بڑھ کر اور جہنم کیا ہوگا

من کی کھیتی سوکھ گئی بہتا پانی خاک ہوا”

مصطفیٰ شاہد

مصطفیٰ شاہد نوجوان نسل کے نمائندہ شاعر ہیں۔ شاعری پر مبنی ان کی تین کتابیں چھپ چکی ہیں۔
مصطفیٰ شاہد

Latest posts by مصطفیٰ شاہد (see all)

مصطفیٰ شاہد

مصطفیٰ شاہد نوجوان نسل کے نمائندہ شاعر ہیں۔ شاعری پر مبنی ان کی تین کتابیں چھپ چکی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *